• اکتوبر 30, 2020

جنسی ہراسانی کا الزام لگانے والی بلاگر کی مقدمے کے بعد علی ظفر سے معافی مانگ لی

انسٹاگرام انفلوئنسر اور بلاگر حمنہ رضا نے گلوکار علی ظفر پر جنسی ہراسانی کا الزام لگانے پر معافی مانگ لی۔

اس ضمن میں بلاگر حمنہ رضا نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر ایک معافی نامہ جاری کیا جس میں انہوں نے گلوکار علی ظفر پر لگائے جانے والے الزامات کو غلط فہمی قرار دیا۔

حمنہ رضا نے معافی نامے میں لکھا کہ ’19 اپریل 2019 میں میشا شفیع کے علی ظفر کے خلاف ٹوئٹ کے بعد میں نے بھی ایک ٹوئٹ کی تھی جس میں کہا تھا کہ ایک مداح کی حیثیت سے میں نے علی ظفر کے ساتھ ایک سیلفی بنوائی تھی اور اس دوران میں ان کے ساتھ کافی پریشان محسوس کر رہی تھی‘۔

بلاگر حمنہ رضا نے اپنے معافی نامے میں وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ’وہ ایک دوستانہ ماحول میں لی گئی ایک سیلفی تھی جسے میں نے غلط فہمی سمجھ لیا تھا‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’مجھے اس طرح کی ٹوئٹ نہیں کرنی چاہیے تھی جب کہ میں آگاہ بھی تھی کہ میری اس طرح کی ٹوئٹ آگے جا کر کس طرح کے نتائج مرتب کر سکتی ہے‘۔

حمنہ رضا نے کہا کہ ’میرا بیان بھی علی ظفر کے خلاف استعمال کیا گیا جس سے ان کی عزت اور شہرت کو نقصان پہنچنے کے ساتھ ساتھ ان کے گھر والوں کو بھی اذیت سے گزرنا پڑا اور مجھے اس سب پر بہت پچھتاوا ہے‘۔

بلاگر حمنہ رضا نے آخر میں گلوکار علی ظفر سے معافی مانگتے ہوئے کہا کہ ’اب آئندہ میں اپنا پلیٹ فارم زیادہ ذمہ داری کے ساتھ استعمال کروں گی‘۔

حمنہ رضا کی جانب سے جاری معافی نامے پر گلوکار علی ظفر کا بھی ردعمل سامنے آیا اور انہوں نے حمنہ رضا کے اس معافی نامے کو قبول کرتے ہوئے ان کے اس فعل کو سراہتے ہوئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

ملکی سمت درست ہے،آئین اور قانون کی رہنمائی میں منتخب حکومت کی مدد جاری رکھیں گے،آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ

Read Next

ناسا کا انٹرنیشنل اسپیس اسٹیشن کراچی کے آسمان پر دیکھا جاسکتا ہے

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے