• اپریل 11, 2021

کرشنگ سیزن شروع ہونے کے بعد ملکی چینی سستی، درآمد شدہ تاحال مہنگی

لاہور:  پاکستان میں کرشنگ سیزن شروع ہونے کے بعد چینی کی قیمت میں کمی آئی ہے لیکن بیرون ملک سے امپورٹ کی گئی چینی شہریوں کی جیب پر بھاری پڑ رہی ہے اور انتظامیہ سستی کی بجائے مہنگی چینی خریدنے کے لئے ڈیلرز پر دباو ڈال رہی ہے۔

فیصل آباد میں انتظامیہ خود شہریوں کو سستی چینی سے محروم کرنے کی وجہ بنی ہوئی ہے۔ دکاندار اور ڈیلرز کہتے ہیں ضلعی انتطامیہ انہی ملوں سے 75روپے کلو چینی خریدنے کی بجائے بیرون ملک سے امپورٹ کی گئی 80 روپے کلو والی چینی خریدنے پر دباو ڈال رہی ہے۔

شہری کہتے ہیں کہ شتر بےمہار مہنگائی نے پہلے ہی کمر توڑ رکھی ہے جبکہ یہاں حکومتی ناقص حکمت عملی کی وجہ سے دکاندار چینی کے من مانے ریٹ وصول کررہے ہیں۔

دکاندار کہتے ہیں درآمد شدہ چینی معیار کے لحاظ سے بھی پاکستانی چینی سے انتہائی ناقص ہے، خریدار موٹی چینی کا مطالبہ کرتے ہیں جبکہ انتظامیہ انہیں انتہائی باریک چینی وہ بھی مہنگے داموں فروخت کر رہی ہے جس کو مارکیٹ میں فروخت کرنا انتہائی مشکل ہے۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

کورونا وائرس دماغ میں داخل ہوسکتا ہے، تحقیق میں حیران کن انکشاف

Read Next

A1 TV Headlines 12 PM | 21 DECEMBER 2020

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے