• جنوری 17, 2022

کرتارپور راہداری نے 74 برس بعد دو بچھڑے بھائیوں کو ملوا دیا

نارووال: پاکستان اور بھارت کی تقسیم کے وقت بچھڑ جانے والے دو بھائیوں کو 74 سال بعد کرتارپور راہداری نے ملوادیا۔

واضح رہے کہ وفاقی حکومت کی جانب سے نومبر 2019ء میں کرتارپور راہداری کھولے جانے کے بعد سکھ یاتری مذہبی پیشوا بابر گرونانک کے جنم دن کی تقریبات کے سلسلے میں کرتار پور آتے ہیں۔

بدھ کے روز سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو میں دو ضعیف العمر افراد کو پاکستان میں موجود گردوارہ کرتارپور صاحب میں ایک دوسرے سے بغل گیر ہوتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

محمد صدیق نے دور سے ہی اپنے بھائی کو پہچان لیا، دونوں بھائی آپس میں مل کر خوب روئے اور بغل گیر ہوتے رہے، بچھڑے بھائیوں کی ملاقات کے جذباتی مناظر سے ہر آنکھ اشکبار ہو گئی۔

ایک بھائی نے دوسرے کو تسلی دیتے ہوئے کہا کہ زندہ ہیں تو مل بھی گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق دونوں بھانی پاکستان اور بھارت کی تقسیم کے وقت 1947 میں بچھڑ گئے تھے۔

یہ ملاقات منگل کے روز کرتارپور صاحب گردوارہ کے احاطے میں ہوئی تھی۔ بڑے بھائی حبیب اپنے چھوٹے بھائی صدیق سے ملنے بھارتی پنجاب کے علاقے پھلے والا سے آئے تھے، جبکہ چھوٹا بھائی فیصل آباد کا رہائشی ہے۔

دونوں بھائی ملاقات کے بعد اپنے اپنے گھر واپس جاچکے ہیں تاہم انہوں نے ایک دوسرے سے وعدہ کیا ہے کہ زندگی رہی تو ملتے رہیں گے۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

جوہر ٹاؤن بم دھماکا، 4 ملزمان کو 9 ،9 مرتبہ سزائے موت کا حکم

Read Next

قومی اسمبلی اجلاس کے دوران غیر متعلقہ شخص اسمبلی ہال میں داخل

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے