• اکتوبر 29, 2020

کراچی میں ہونے والی بارش کا پانی تاحال نہ نکالا جا سکا، کئی علاقے زیرآب

کراچی:  کراچی میں ہونے والی بارش کا پانی تاحال نہ نکالا جا سکا، کئی علاقے زیرآب آگئے، دادا بھائی ٹاون، سرجانی ٹاؤن، یوسف گوٹھ سمیت متعدد علاقوں میں پانی بھرا ہے۔ نرسری فرنیچر مارکیٹ سے پانی کی نکاسی ہوگئی تاہم بڑے نقصان پر تاجر پریشان ہیں۔

کورنگی کازوے ٹریفک کیلئے بدستور بند ہے تاہم بچوں نے پکنک پوائنٹ بنا لیا، بچے صبح سویرے ندی میں پہنچ کر ڈبکیاں لگانے لگے۔ نرسری فرنیچر مارکیٹ میں پانی کی نکاسی تو ہوگئی تاہم گزشتہ روز کئی کئی فٹ پانی جمع ہونے سے دکانداروں کو بڑا نقصان اٹھانا پڑا۔ سرجانی ٹاون کے یوسف گوٹھ کی حالت بھی جوں کی توں ہے، علاقہ پانی سے بھرا ہے، لوگ گھروں تک محدود ہیں۔

دوسری جانب کراچی میں بارش سے متاثرہ علاقوں میں پاک فوج کا ریسکیو اینڈ ریلیف آپریشن جاری ہے۔ آرمی انجینئرز کور کی ہیوی مشینری اور پلانٹس ملیر ندی پر پانی کا بہاؤ روکنے کی کوشش میں مصروف ہے جہاں شگافوں کو پر کیا جا رہا ہے اور لوگوں کو کشتیوں کی مدد سے محفوظ مقامات پر منتقل کرنے کیلئے بھی اقدامات کئے گئے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق کوہی گوٹھ اور درمحمد گوٹھ میں بارش کے باعث 200 سے زائد خاندانوں نے گھر کی چھتوں پر پناہ لی، متاثرین میں کھانے پینے کی اشیا بھی تقسیم کی گئیں۔

ادھر محکمہ موسمیات نے کراچی میں گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران ہونیوالی بارش کے اعدادوشمار جاری کر دیئے، جس کے مطابق پی اے ایف فیصل بیس پر سب سے زیادہ 134، گلشن حدید میں 122، صدر میں 88، لانڈھی میں 84 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی جبکہ پی اے ایف مسرور بیس پر 68، جناح ٹرمینل پر 67 ملی میٹر بارش ہوئی۔

محکمہ موسمیات کے مطابق سر جانی ٹاون میں 46، کیماڑی میں 23، سعدی ٹاون میں 71، نارتھ کراچی میں 49، ناظم آباد میں 91 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

وزیراعظم کا شہر قائد کی صورتحال کا نوٹس، تمام وسائل بروئے کار لانے کی ہدایت

Read Next

کراچی میں بارشوں سے ہنگامی صورتحال، پاک فوج کا ریسکیو اینڈ ریلیف آپریشن

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے