• مئی 26, 2022

وزیراعظم کا 18 ویں ترمیم اور پارلیمانی جمہوریت مخالف بیان قابل مذمت: شیری رحمان

اسلام آباد: شیری رحمان نے کہا ہے کہ ‏وزیراعظم کا 18 ویں ترمیم اور پارلیمانی جمہوریت مخالف بیان قابل مذمت ہے، ‏صوبوں کے ساتھ عدم تعاون کی ذمہ دار وفاقی حکومت ہوتی ہے۔

پیپلزپارٹی کی مرکزی نائب صدر و سینیٹر شیری رحمان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ انٹریو میں وزیراعظم نے کہا 18 ویں ترمیم سے مسائل آئے ہیں، 18 ویں ترمیم آئین پاکستان کے بعد دوسرا سب سے بڑا متفقہ دستاویز تھا، جو صدارتی اختیارات آپ چاہتے ہیں وہ آصف زرداری نے پارلیمان کو منتقل کئے۔

شیری رحمان نے وزیراعظم کے عالمی نشریاتی ادارے کو انٹرویو بارے ردعمل میں کہا کہ تین صوبوں میں آپ کی پارٹی کی حکومت ہے، کیا پنجاب، کے پی اور بلوچستان کے عدم تعاون کا ذمہ دار بھی کوئی اور ہے ؟ اپنی نااہلی اور ناکامیوں کا کب تک دوسروں کو مورد الزام ٹھرا ئیں گے ؟ وزیراعظم متنازعہ بیانات دینے سے گریز کریں۔

Read Previous

الیکشن شیڈول معطل کرکے غلط مثال قائم نہیں کریں گے، سپریم کورٹ

Read Next

کالاباغ ڈیم پر سندھ حکومت کو قائل کرنا ہو گا، عمران خان

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔