• اکتوبر 23, 2020

مودی کو ایران سے اچانک کیا کام پڑ گیا؟

ایران کا مطلب ہے آریائی سرزمین اور وہ خطہ جو اب انڈیا کہلاتا ہے، زمانہِ قدیم میں آریاورتا کے نام سے بھی جانا جاتا تھا

 

اسلامی ملک بننے سے پہلے ایران میں زرتشت مذہب کا بول بالا تھا لیکن اب یہاں پر چند ہی پارسی رہ گئے ہیں۔ اسلام کے عروج کے بعد وہاں کے کچھ پارسی نقل مکانی کر کے انڈیا چلے گئے جہاں اکثریت نے گجرات میں رہائش اختیار کی اور دیگر پارسیوں نے مغربی ممالک کا رخ کیا۔ایران میں اکثریت شیعہ مسلمانوں کی ہے اور کہا جاتا ہے کہ دنیا میں ایران کے بعد انڈیا میں شیعہ مسلمانوں کی سب سے بڑی آبادی ہے۔ اگر برصغیر کی تقسیم نہ ہوتی تو ایران کے ساتھ پاکستان کی نہیں، انڈیا کی سرحد ہوتی۔آپ کو یاد ہوگا کہ آٹھ ستمبر کو انڈیا کے وزیر خارجہ ایس جے شنکر ایران کے دورے پر تھے، جہاں انھوں نے ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف سے ملاقات کی۔اس ملاقات کے بعد ایرانی وزیر خارجہ نے ٹویٹ کی کہ انڈین وزیر خارجہ کے ساتھ مختلف معاملات پر مثبت بات چیت ہوئی ہے۔اس سے قبل چھ ستمبر کو انڈیا کے وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ بھی ایران میں تھے اور انھوں نے ایران کے وزیر دفاع بریگیڈیئر جنرل امیر حاتمی سے ملاقات کی۔ان یکے بعد دیگرے دو ملاقاتوں پر لازمی طور پر سوال اٹھتا ہے کہ مودی حکومت کے دو اہم کابینہ کے وزیروں کا چار دن میں ایران کا دورہ کرنے کا کیا مطلب ہے؟

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

مسلم لیگ 30 دسمبر سے پہلے تقسیم ہوجائے گی : شیخ رشید کا نیا دعویٰ

Read Next

اینکر مرید عباس کے قتل ضمانت خارج ہونے پر عدالت سے فرار!

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے