• اکتوبر 26, 2020

لاہور میں موسلا دھار بارش نے انتظامیہ کی کارکردگی کا پول کھول دیا

لاہور: لاہور میں ڈیڑھ گھنٹے تک ہونے والی بارش سے جل تھل ایک ہو گیا، انتظامیہ کے لیے پانی کا نکاس چیلنج بن گیا، اہم شاہراہیں ڈوب گئیں، نشیبی علاقے ندی نالوں کا منظر پیش کرنے لگے۔ محکمہ موسمیات نے بارش کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری رہنے کی پیش گوئی کی ہے۔

لکشمی چوک میں 61، جیل روڈ 53 اعشاریہ 6، گلبرگ 47، مغلپورہ 46، گلشن راوی 44، اپر مال 39 اور پانی والا تالاب میں 36 ملی میٹر بارش ہوئی، فرخ آباد میں 32، ایئر پورٹ 26، اقبال ٹاؤن 19، چوک ناخدا 15، جوہر ٹاؤن 7، نشتر ٹاؤن 6 اور سمن آباد میں 5 اعشاریہ 7 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

دوسری جانب لاہور میں 62 ملی میٹر تک ہونے والی بارش نے واسا کے دعوؤں کا پول بھی کھول دیا۔ اہم سڑکیں اور نشیبی علاقے ڈوب گئے، بی بی پاک دامن کے علاقے کی گلیاں تالاب کا منظر پیش کرنے لگیں، ایمپریس روڈ، حاجی کیمپ بوہڑ والا چوک اور ریلوے سٹیشن پر بھی بارش کے پانی نے ڈیرے ڈال لئے۔

جزوی طور پر تعمیر ہونے والی حاجی کیمپ ڈرین بھی بارشی پانی کا نکاس نہ کرسکی، ایمپریس روڈ پر واقع بس سٹینڈ بھی پانی میں ڈوب گیا۔ بارش کے پانی کی بروقت نکاسی نہ ہونے سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، ایم ڈی واسا سید زاہد عزیز نے بارش کے دوران لکشمی چوک کا دورہ کیا اور نکاسی آب کا جائزہ لیا۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

سیالکوٹ: نالہ پلکھو میں طغیانی، پل بہہ گیا، کئی دیہی علاقوں کا زمینی رابطہ منقطع

Read Next

کورونا وائرس کو جلد کچل دوں گا، جوبائیڈن امریکی عظمت کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں: ٹرمپ

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے