• مئی 24, 2022

عالیہ بھٹ کی’گنگوبائی کاٹھیاواڑی’پرکنگنا کیوں برہم؟

دیپیکا پڈوکون کی حالیہ فلم ‘گہرائیاں’ کو ردی کی ٹوکری میں ڈالنے کےبعد کنگنارناوٹ حقیقی کردارپرمبنی بالی ووڈ کی نئی آنے والی فلم ‘ گنگو بائی کاٹھیاواڑی’ کی کاسٹ اور اسے بنانے والوں کو تنقید کا نشانہ بنارہی ہیں۔

کئی فلموں میں عمدہ پرفارمنس دے کرسراہی جانے والی کنگنا ان دنوں ہٹ فلموں سے زیادہ اپنی توجہ ایک کے بعد ایک تنازع چھیڑنے اور متنازع بیانات دینے پرمرکوز رکھے ہوئے ہیں۔

دپیکا پڈوکون، سدھانت چترویدی اوراننیا پانڈے کی فلم ‘گہرائیاں’کی ریلیزکے بعد کنگنا نے انسٹااسٹوریزمیں فلم کو “کچرا” قراردیتے ہوئے کہا تھا کہ ، ‘ بُری فلمیں بُری ہی ہوتی ہیں، جسمانی نمائش یا فحاشی اسے بچا نہیں سکتیں’۔ یہ پہلا موقع نہیں ہے جب کنگنا نےشوبزساتھیوں کے خلاف ایسا کچھ کہا ہو، اس سے قبل بھی اداکارہ کئی مواقع پربالی ووڈ کو اپنادشمن قراردیتے ہوئے مقابلہ کرنے کا عزم ظاہرکرچکی ہیں کیونکہ کنگنا کا دعویٰ ہے کہ انڈسٹری میں اقربا پروری پھیل رہی ہے۔

کرن جوہر، تاپسی پنو، دیپیکا پڈوکون ،عالیہ بھٹ سمیت کچھ ایسے نام ہیں جنہیں کنگنا کی جانب سے واضح طور پرنشانہ بنایا جاچکا ہے۔ گہرائیاں کی ‘برائیاں ‘ کرنے کے بعد کنگنا نے حقیقی کردار پرمبنی عالیہ بھٹ کی فلم ‘ گنگوبائی کاٹھیاواڑی’ کی تشہیری مہم کے حوالے سے اپنے خدشات کا اظہار کیا ہے۔ فلم میں عالیہ نے ایک قحبہ خانے کی مالکن گنگوبائی ہرجیونداس کا کرداراداکیا ہے اور ڈائریکشن سنجے لیلا بھنسالی کی ہیں۔

فلم فیئر نے حال ہی میں ٹوئٹر پرعالیہ کے کردارکی کاپی کرنے والی ایک کم عمر لڑکی کی ویڈیو پوسٹ کی جسے تنقید کے بعد ہٹا دیا گیا۔

اسی ویڈیو پرردعمل ظاہرکرنے والی کنگنا کا کہنا ہے کہ ‘کیا اس بچی کو سیکس ورکرکی نقل کرنی چاہیے جس کے منہ میں بیڑی ہے اوروہ گندے اور فحش مکالمےبول رہی ہے ، سیکڑوں دوسرے بچے ہیں جو اسی طرح استعمال ہو رہے ہیں ‘۔

کنگنا نے انسٹاپوسٹ میں یونین منسٹرآف چائلڈ اینڈ ویمن ڈویلپمنٹ سمرتی ایرانی کو بھی ٹیگ کیا۔ اداکارہ نے اس پروموشنل ویڈیوکے اسکرین شاٹس شیئرکیے جن میں مختلف حلقوں کی جانب سے فلم پرتنقید کی گئی ہے۔ فلم فیئر کو اس ڈیلیٹ کیے جانے والے ٹویٹ پر بڑی سطح پرمخالفت کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

سنجے لیلا بھنسالی کی یہ فلم بھارتی مصنف حسین زیدی کی کتاب ‘ دی مافیا کوئینز’ پرمبنی ہے جسے 25 فروری 2022 کو ریلیز کیا جائے گا۔

گجرات کےعلاقے کاٹھیاواڑکے معتبر گھرانے سے تعلق رکھنے والی گنگو بائی والد کے اکاؤنٹینٹ رمنیک لال کی محبت میں خاندان کی مخالفت پر گھرسے بھاگ گئیں لیکن ہوا کچھ یوں کہ محبوب نے دھوکے سے انہیں جسم فروشی کا دھندہ کرنے والوں کے ہاتھ صرف 500 روپے میں فروخت کردیا۔

واپسی کے تمام راستے مسدود پاکرممبئی کے قحبہ خانوں میں حالات کی چکی میں پستے پستے گنگو ایک مضبوط ترین عورت بن کرابھری جہاں سب اسے میڈم کہہ کرپکارنے لگے۔ اپنے پیشے سے وابستہ خواتین کی زندگیاں بہتر بنانے کیلئے کوشاں گنگو بائی کا کردار اس حوالے سے خاصا متاثرکن سمجھاجاتا ہے

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

سعودی عرب میں چار روزہ ’سعودی میڈ‘ نمائش شروع

Read Next

Headlines | 15 February 2022 | A1 TV

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے