• جولائی 28, 2021

شاہد آفریدی قومی کرکٹ ٹیم کی سلیکشن پالیسی سے نالاں

کراچی: قومی کرکٹ ٹیم کی سلیکشن پالیسی سے نالاں سابق آل راؤنڈر شاہد آفریدی نے کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کی نمائندگی کا تمام تر عمل انتہائی آسان بنا دیا گیا ہے ۔

 رپورٹ کے مطابق کشمیر پریمیئر لیگ کی ڈرافٹنگ کے دوران سابق قومی کپتان کا کہنا تھا کہ پاکستانی ٹیم میں آنے سے قبل ہر کھلاڑی کو کم از کم دو سے تین سال تک ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنے کا موقع دیا جائے کیونکہ کسی بھی سطح کی کرکٹ میں ایک یا دو مرتبہ کارکردگی کو قومی ٹیم میں شمولیت کیلئے قابل غور سمجھ لیا جاتا ہے جو درست نہیں کیونکہ کرکٹرز کو ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنے دی جائے تاکہ وہ خود کو مستحکم کر سکیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بیٹسمینوں کو کم از کم دو سے تین جبکہ فاسٹ بالرز کو ایک سے دو سال کی ڈومیسٹک کرکٹ کے بعد مواقع دیئے جائیں اور ملک کیلئے کھیلنا اتنا آسان نہ بنایا جائے کہ کوئی بھی اس اعزاز کا مالک بن جائے ۔شاہد آفریدی کا کہنا تھا کہ کھلاڑی کا خود پر بھروسہ اہمیت کا حامل ہے جبکہ اسے علم ہونا چاہئے کہ وہ کس نمبر پر زیادہ بہتر انداز سے بیٹنگ کر سکتا ہے ۔آآآ

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

کورونا وائرس کا زور برقرار، مزید 24زندگیاں نگل گیا، 1683 مریضوں کا اضافہ

Read Next

علی ظفر سے میزبانی کرانے پر میشا شو انتظامیہ پر برہم

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے