• جولائی 31, 2021

سینیٹ میں ووٹ ڈالنے کے بعد فیصل واوڈا مستعفی ہوگئے

Pic02-053 ISLAMABAD: Jan02 – Federal Minister for Water Resources Faisal Vawda addressing during a press conference. ONLINE PHOTO by S M Sohail

وفاقی وزیر برائے پانی و بجلی اور پاکستان تحریک انصاف  کے رہنما فیصل واوڈا نے قومی اسمبلی کی سیٹ سے استعفی دے دیا ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ میں پی ٹی آئی رہنما فیصل واوڈا کی نااہلی کے کیس کی سماعت ہوئی جس کے دوران  وفاقی وزیر کے وکیل نے استعفی عدالت میں پیش کر دیا۔

فیصل واوَڈا نے ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد اپنا استعفیٰ جمع کرایا۔ کیس کی سماعت جسٹس عامر فاروق کررہے ہیں۔

وفاقی وزیر فیصل واوڈا کے وکیل نے استعفیٰ عدالت میں پیش کرنے کے بعد کہا کہ قومی اسمبلی سے مستعفی ہونے کے بعد فیصل واوڈا کے خلاف نااہلی کی درخواست غیر موثر ہوچکی ہے۔

معزز جج نے ان کے استعفیٰ پر ریمارکس دیے کہ فیصل واوڈا اس وقت تک رکن قومی اسمبلی رہیں گے جب تک اسپیکر ان کا استعفیٰ منظور نہیں کر لیتے۔

واضح رہے کہ پی ٹی آئی رہنما فیصل واوڈا کے خلاف الیکشن کمیشن اور اسلام آباد ہائیکورٹ میں دوہری شہریت کے معاملے پر نااہلی کیس کی سماعت ہورہی ہے۔

2018 کے عام انتخابات میں حصہ لینے کے لیے فیصل واوڈا نے 11 جون 2018 کو الیکشن کمیشن میں کاغذات نامزدگی داخل کرائے تھے تاہم اس وقت فیصل واوڈا امریکی شہریت رکھتے تھے۔

کاغذات جمع کراتے وقت الیکشن کمیشن میں دوہری شہریت نہ رکھنے کا حلف نامہ جمع کرایا گیا۔ کاغذات کی اسکروٹنی کے وقت بھی فیصل واوڈا امریکی شہریت کے حامل تھے۔

ریٹرننگ آفسر نے 18 جون 2018 کو فیصل واوڈا کے کاغذات نامزدگی منظور کیے اور 22 جون 2018 کو فیصل واوڈا کی جانب سے امریکی شہریت ترک کرنے کے لیے کراچی میں امریکی قونصلیٹ میں درخواست دی گئی جسے 25 جون 2018 کو منظور کیا گیا اور فیصل واوڈا کو امریکی شہریت چھوڑنے کا سرٹیفکیٹ جاری ہوا تھا

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

حکومت نے سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد الیکشن کمیشن سے رجوع کر لیا

Read Next

سینیٹ انتخابات میں پولنگ کے عمل پر اعتراض اٹھا دیا گیا

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے