• جولائی 31, 2021

سینیٹ انتخابات میں پولنگ کے عمل پر اعتراض اٹھا دیا گیا

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں ووٹنگ کے دوران پولنگ کے عمل پر اعتراض اٹھا دیا گیا۔

سینیٹ انتخابات میں قومی اسمبلی میں ووٹنگ کے دوران یوسف رضا گیلانی کے پولنگ ایجنٹ عبدالقادر پٹیل اور مسلم لیگ ن کے پولنگ ایجنٹ علی گوہر نے پولنگ کے عمل پر اعتراض اٹھایا۔

عبدالقادر پٹیل نے اعتراض شیخ راشد شفیق کے ووٹ ڈالنے کے موقع پر کیا۔ عبدالقادر پٹیل نے کہا کہ لائٹ ٹھیک کرنے کے بہانے پولنگ افسر نے ووٹ چیک کیا اس لیے راشد شفیق کا ووٹ کینسل کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ پولنگ افسر کافی دیر سے ارکان کے ووٹ چیک کر رہے تھے۔

ریٹرننگ افسر ظفر اقبال نے کہا کہ پولنگ افسر صرف لائٹ چیک کرنے گئے تھے۔ ریٹرننگ افسر نے عملے کو ہدایت کی کہ تمام عملہ پولنگ بوتھ سے ہٹ جائے۔

اس موقع پر رکن قومی اسمبلی اور مسلم لیگ ن کے پولنگ ایجنٹ علی گوہر نے بھی اعتراض اٹھاتے ہوئے کہا کہ جہاں ووٹ ڈالا جا رہا ہے وہاں عملہ گڑ بڑھ کر رہا ہے اور مہر لگانے کی جگہ پر عملہ کو عین ووٹ پر مہر لگاتے ہوئے بھیجا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ لائٹ ٹھیک کرنے کے بہانے ووٹ کو چیک کیا جا رہا ہے اس لیے پولنگ کا عمل ہماری نظر میں مشکوک ہو گیا ہے تاہم ہم نے تنبیہ کر دی ہے کہ الیکشن کمیشن اس عمل کو روکے۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

سینیٹ میں ووٹ ڈالنے کے بعد فیصل واوڈا مستعفی ہوگئے

Read Next

یوسف رضا گیلانی بمقابلہ عبد الحفیظ شیخ، سب کی نظریں اسلام آباد کی نشست پر

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے