• مئی 25, 2022

سعودی عرب:سرکاری دفاتر اور مساجد میں شارٹس پہننےپر پابندی عائد

سعودی وزارت داخلہ نے مساجد اور سرکاری اداروں میں شارٹس پہننے پر پابندی عائد کردی، خلاف ورزی کرنے والوں پر بھاری جرمانہ عائد کیا جائے گا۔

سعودی حکام کے مطابق نئے ضابطہ اخلاق کے نفاذ کے بعد مساجد اور سرکاری اداروں میں شارٹس پہن کر آنا سماجی آداب کے منافی ہے۔ اگر کوئی سعودی شہری یا غیر ملکی سماجی آداب کی خلاف ورزی کا مرتکب پایا گیا تو اس پر 250 سے 500 ریال تک جرمانہ عائد کیا جائے گا۔

اعلامیے کے مطابق جو کوئی بھی مساجد سے اذان کے دوران کسی بھی قسم کا ‘موسیقی’ بجاتا ہوا پکڑا جائے گا اسے اب پہلی بار خلاف ورزی کرنے پر 1000 ریال جرمانہ کیا جائے گا اور اگر خلاف ورزی دہرائی گئی تو 2000 ریال وصول کیے جائیں گے۔

واضح رہے کہ حکومت نے واضح کیا ہے کہ مساجد کے علاوہ عوامی مقامات پر مردوں کی جانب سے شارٹس پہننا مذکورہ قانون کی خلاف ورزی نہیں سمجھا جائے گا۔

اس سے قبل سعودی عرب کی وزارت حج و عمرہ نے عمرہ زائرین کے لیے نئی ہدایات جاری کی تھیں جس کے تحت حاجیوں کے لیے منفی پی سی آر ٹیسٹ کی رپورٹ کو لازمی قرار دیا گیا ہے

Read Previous

عام انتخابات:ن لیگ اورپی ٹی آئی میں کانٹے کامقابلہ متوقع

Read Next

غلط خبر کو بنیاد بنا کر کسی کو بھی جیل میں ڈال سکتے ہیں، سعید غنی

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے