• اکتوبر 16, 2021

خیبر پختونخوا میں عدالتی سزائوں کے تعین اور کمی سے متعلق قانون سازی مکمل

پشاور: خیبرپختوںخوا میں عدالتی سزائوں کا تعین اور ان میں کمی سے متعلق قانون سازی کر لی گئی، سزائیں دینے کے لیے حکومت قواعد و ضوابط ترتیب دے گی، قانون کا اطلاق ماتحت عدالت کی دی جانیوالی بعض سزائوں پر ہو گا، معاون خصوصی کہتے ہیں عدالتوں پر بوجھ کم ہو گا۔

خیبر پختونخوا حکومت نے سزائوں کے تعین سے متعلق سابقہ قوانین میں ترامیم کر لیں، ملزمان کو سزائیں دینے کےلیے حکومت قواعد و ضوابط ترتیب دے گی

صوبے میں سینٹینسنگ بل 2021 منظور کرلیا گیا جس کے تحت سزائوں کو سنائے جانے کے موقع پر مجرم کی عمر، برتائو اور دیگر امور کو مد نظر رکھا جائیگا، شدت پسندی، ریاست کے خلاف سرگرمیاں، مذہبی منافرت پھیلانے سمیت دیگر سنگین جرائم کی پاداش میں ملزمان کو سزائیں دینے کے لیے حکومتی قواعد وضوابط پر عملدرآمد لازمی ہو گا، معاون خصوصی کہتے ہیں اقدام سے عدالتوں پر بوجھ کم ہوگا۔

بل کے تحت ماتحت عدلیہ کو بھی پابند بنایا جائیگا کہ وہ حکومت کی جانب سے مرتب کردہ ہدایت پرعملدرآمد کرے، حکومت کی جانب سے ایک کونسل کا قیام عمل میں لایا جائیگا، سزائوں سے متعلق کونسل قوانین پر عملدرآمد اور عوام میں آگاہی بھی پیدا کرے گی، شہریوں نے بھی اقدام کو خوش آئند قرار دیا۔

قانون کے ذریعے 6 ماہ سے 25 سال قید کےحوالے سے 4 زونز بنائے ہیں اور ہر ایک کے حوالے سے الگ الگ گائیڈ لائنز مرتب کی جائیں گی۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

کورونا سے مزید 40 افراد انتقال کر گئے، 4 ہزار 840 مریضوں کی حالت تشویشناک

Read Next

وزیراعلیٰ بلوچستان کیخلاف تحریک عدم اعتماد ، کئی حکومتی ارکان ابھی تک ناراض

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے