• اکتوبر 31, 2020

جڑانوالہ: 6 افراد کی لفٹ دینے کے بہانے لڑکی سے اجتماعی زیادتی

جڑانوالہ روڈ پر تھانا مانگٹانوالہ کے قریب 6 افراد نے لڑکی کو مبینہ طور پر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔

پولیس کے مطابق 24 ستمبر کو بس خراب ہونے پر لڑکی دوسری سواری کے انتظار میں سڑک کنارے کھڑی تھی کہ کار سوار افراد نے لفٹ دینے کے بہانے اسے ساتھ بٹھا لیا اور پھر ملزم لڑکی کو ایک ڈیرے پر لے گئے جہاں 6 افراد نے نشہ آور چیز پلا کر اسے مبینہ طور پر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا اور برہنہ حالت میں فصلوں میں پھینک کر فرار ہو گئے۔

مانگٹانوالہ پولیس نے وقوعے کے 5 دن بعد مقدمہ درج کر لیا تاہم ابھی تک کوئی ملزم گرفتار نہیں ہو سکا۔

وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار اور آئی جی پولیس انعام غنی نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کر لی۔

آئی جی پنجاب انعام غنی نے لڑکی سے زیادتی میں ملوث ملزمان کو جلد از جلد گرفتار کر کے سخت قانونی کارروائی کا حکم دے دیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ لاہور گجر پورہ موٹروے پر بھی خاتون سے زیادتی کا واقعہ پیش آیا تھا جس میں دو ملزمان نے خاتون کی گاڑی کے شیشے توڑ کر انہیں بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا، پولیس نے واقعے کے ایک ملزم کو گرفتار کرلیا جب کہ مرکزی ملزم عابد تاحال پولیس کے ہاتھ نہ آسکا۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی، برطانوی وزیراعظم کے والد پر جرمانہ عائد

Read Next

جبری گمشدگی سے مراد ریاست کے کچھ لوگ ہی لوگوں کو زبردستی غائب کرتے ہیں

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے