• اکتوبر 27, 2020

بیروت دھماکے کےبعد لبنان سیاسی بحران کی لپیٹ میں آگیا،وزیراطلاعات مستعفی

بیروت, لبنان میں عوامی احتجاج کے بعد وزیر اطلاعات مستعفی ہو گئی ہیں۔ مجموعی طور پر پارلیمنٹ کے چھ اراکین عہدے سے استعفیٰ دے چکے ہیں۔

 لبنان کی اہم شخصیات کی جانب سے حکومت سے استعفیٰ کا مطالبہ زور پکڑ گیا ہے۔ عوام کی جانب سے حکومت کے خلاف مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے۔ سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں سات سو سے زائد افراد زخمی ہوچکے ہیں۔

لبنان کی مالی امداد کے لئے فرانس کے زیر انتظام ڈونرز کانفرنس منعقد ہوئی۔ پوپ فرانسس نے عالمی برادری سے لبنان کی مزید امداد کرنے کا مطالبہ کیا۔

سیکورٹی حکام کے مطابق بیروت میں دھماکے سے 141 فٹ گہرا گڑھا پڑا۔ حادثے کے نتیجے میں ہونے والی تباہی کی نئی فوٹیج منظر عام پر آ گئی ہے۔ 4 اگست کو بیروت بندرگاہ میں امونیم نائٹریٹ کے ذخیرہ میں دھماکہ ہوا تھا جس کے نتیجے میں 158 افراد ہلاک، چھ ہزار سے زائد زخمی جبکہ ڈھائی لاکھ افراد بے گھر ہوئے۔ ماہرین کے مطابق حادثے سے لبنان کی 25 فیصد جی ڈی پی ختم ہو چکی ہے۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

فٹبال چیمپئنز لیگ: بارسلونا اور بائرن میونخ کوارٹرز فائنل میں پہنچ گئیں

Read Next

‘سشانت سنگھ کی خاتون مینجر کا موت سے پہلے کا آخری ویڈیو سامنے آ گیا’

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے