• دسمبر 5, 2021

بڑھتی مہنگائی کیخلاف احتجاجی حکمت عملی پر غور، پی ڈی ایم اجلاس طلب

اسلام آباد: حکومت مخالف اتحاد کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کا ہنگامی اجلاس طلب کر لیا۔ اجلاس میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے اور بڑھتی ہوئی مہنگائی کے خلاف احتجاجی حکمت عملی پر بھی غور کیا جائے گا۔

اجلاس میں پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) میں شامل تمام جماعتوں کی قیادت ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کرے گی۔ اجلاس ہفتہ کے روز سہ پہر ساڑھے 3 بجے ہو گا۔ پی ڈی ایم کے اجلاس میں مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف، مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف اور پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز شرکت کریں گی۔

اجلاس میں محمود خان اچکزئی، سردار اختر مینگل اور آفتاب شیر پاؤ، شاہد خاقان عباسی اور مولانا اویس نورانی سمیت پی ڈی ایم کے دیگر قائدین بھی شرکت کریں گے۔

اجلاس میں دس نومبر کو ہونے والے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے حوالے سے مشترکہ حکمت عملی پر غور کیا جائے گا جس میں حکومت کی جانب سے مشترکہ اجلاس سے ای وی ایم، ای ووٹنگ اور بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے سمیت 18 بل پاس کروائے جائیں گے۔

اجلاس میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے اور بڑھتی ہوئی مہنگائی کے خلاف احتجاجی حکمت عملی پر بھی غور کیا جائے گا۔

اس سے قبل ملک بھر میں بڑھتی ہوئی مہنگائی اور پٹرول کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے کے بعد پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر میاں شہباز شریف نے بلاول بھٹو زرداری،فضل الرحمان سمیت دیگر قومی رہنماؤں ٹیلیفونک رابطے کے دوران اتفاق کیا ہے کہ بدترین مہنگائی کے خلاف پارلیمنٹ کے اندر اور باہر بھرپور ردعمل دیا جائے گا۔

قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے ٹیلی فون پر پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری ،پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان ،بلوچستان نیشنل پارٹی کے چیئرمین سردار اختر جان مینگل ،قومی وطن پارٹی کے سربراہ آفتاب احمد خان شیرپاؤ، ایمل ولی خان، انس نورانی اور مالک بلوچ کے ساتھ رابطہ کیا اوررہنمائوں سے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کی مشترکہ حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا۔

قومی رہنماؤں سے ٹیلیفونک رابطے میں نیب ترمیمی آرڈیننس کے حوالے سے مشاورت کی گئی جبکہ قائدین لنے بدترین مہنگائی کے خلاف پارلیمنٹ کے اندر اور باہر بھرپور ردعمل پر اتفاق کیا ہے۔

قائدین نے اس بات پر بھی اتفاق کیا کہ عوام مہنگائی اور اس حکومت کا بوجھ اٹھانے کو تیار نہیں،موجود حکمرانوں سے نجات چاہتے ہیں،یہ حکومت رہی تو عوام اور معیشت زندہ نہیں رہے گی،نیب کے کالے قانون کو پارلیمنٹ کے اندر اور باہر چیلنج کرنے کی حکمت عملی پر مشاورت ،موجودہ کرپٹ ترین حکومت خود کو احتساب سے بچانا چاہتی ہے۔

قبل ازیں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو کو فون کیا، دونوں رہنماؤں نے ملکی سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا۔

بلاول بھٹو اور شہباز شریف کے درمیان ملک میں بدترین مہنگائی کے بعد عوامی مسائل کے حوالے سے بھی گفتگو ہوئی۔ دونوں رہنماؤں نے پارلیمان میں اپوزیشن کی مشترکہ حکمت عملی کے حوالے سے بھی بات چیت کی۔ بلاول بھٹو نے شہباز شریف سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ ریلیف کا لالی پاپ دیکر عوام کو تکلیف میں مبتلا کر دیا۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

سابق چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ خواجہ شریف انتقال کر گئے

Read Next

سرکاری ملازم خاتون کے انتقال پر شوہر کو نوکری ملے گی، لاہور ہائیکورٹ

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے