• مارچ 5, 2021

ایف آئی اے کو کچھ نہیں آتا اور اس نے کسی معاملے پر نتائج نہیں دیے: چیف جسٹس

اسلام آباد: چیف جسٹس پاکستان جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے ہیں کہ ایف آئی اے کو کچھ کرنا نہیں آتا اور اس نے کسی معاملے پر نتائج نہیں دیے۔

سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں آغا افتخار الدین ویڈیو از خود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی جس سلسلے میں اٹارنی جنرل عدالت میں پیش ہوئے۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ اٹارنی جنرل صاحب یہ سب کیا ہو رہا ہے؟ اس پر اٹارنی جنرل نے کہا کہ جی بلکل دیکھا ہے میں نے، جج کی اہلیہ نے تھانے میں درخواست دی ہے، پولیس نے معاملہ ایف آئی اے کو بھیج دیا ہے اور  ایف آئی اے الیکٹرانک کرائم کے تحت کارروائی شروع کر دی ہے۔

اٹارنی جنرل کے جواب پر جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ ایف آئی اے کچھ نہیں کررہا، اس کے پاس ججز کے دیگر معاملات بھی ہیں، ایف آئی اے کو کچھ کرنا نہیں آتا، اس نے کسی معاملے پر نتائج نہیں دیے۔

بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت 2 جولائی تک ملتوی کرتے ہوئے ڈی جی ایف آئی اےکو بھی نوٹس جاری کردیا۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

کورونا کیسز میں اضافہ: اسلام آباد کے مزید 2 علاقے سیل کرنے کا حکم

Read Next

بھارتی میوزک کمپنی کی جانب سے عاطف کا گانا ہٹانے پر بھارتی مداح ناراض

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے