• نومبر 29, 2021

اپوزیشن کا حکومت کو قانون سازی کے معاملے پر ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ

اسلام آباد: وفاقی حکومت کو اپوزیشن نے قانون سازی کے معاملے پر ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کر لیا۔

حزب اختلاف کی جماعتوں پر مشتمل قانونی کمیٹی کا اجلاس ہوا، اجلاس میں شاہد خاقان عباسی، یوسف رضا گیلانی، شاہدہ اختر علی، شیری رحمان، مریم اورنگزیب، سیّد خورشید شاہ، شازیہ مری، خواجہ آصف، سعد رفیق، سردار ایاز صادق بھی موجود تھے۔

اجلاس کے دوران اپوزیشن رہنماؤں نے مشترکہ اجلاس سے متعلق حکمت عملی پر غور کیا۔

اپوزیشن نے کہا کہ حکومت کی قانون سازی کو ناکام بنائیں گے، حکومت 30 بلز مشترکہ اجلاس میں منظور کرانے کی خواہشمند ہے ، ووٹ چور حکومت کا نیب آرڈیننس اور ای وی ایم کا سازشی منصوبہ ناکام بنانے کیلئے تیار ہیں

اپوزیشن نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کو خود کواور انکی کرپٹ حکومت کو این آراو نہیں لینے دیں گے ، حکومتی عوام دشمن عزائم کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جائے گا، مہنگائی سے عوام کی جان نکالنے والی حکومت کے خلاف متحدہ اپوزیشن کی مشترکہ حکمت عملی بھی تیار ہے۔

دوسری طرف پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ اپوزیشن پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کی قیادت میں متحد ہے، پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں پیپلزپارٹی مکمل تعاون کرے گی۔

قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے اپوزیشن رہنماؤں کے اعزاز میں عشائیہ دیا۔ اس میں پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری نے بھی شرکت کی۔ بلاول بھٹو کے ہمراہ پی پی پی اراکین پارلیمان بھی شہباز شریف کی جانب سے دئیے گئے عشائیے میں موجود تھے۔

اس دوران بلاول نے اپوزیشن کی تمام سیاسی جماعتوں کے اراکین سے ملاقات کی، بلاول اور اپوزیشن اراکین کے درمیان ملکی سیاسی صورت حال پر بات چیت کی گئی۔

اجلاس کے دوران خطاب کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کا کہنا تھا کہ تمام لیگی اراکین پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں حاضری یقینی بنائیں۔ حکومت نے 22 کروڑ عوام کی زندگی اجیرن کردی ہے، فیصلہ کیا مہنگائی کے خلاف اور نیب آرڈیننس کے خلاف کمر کس لی ہے، عمران نیازی این آر او لینا چاہتا ہے، متحدہ اپوزیشن پارلیمان میں اور پارلیمان سے باہر بھرپور احتجاج کرے گی، مہنگائی کے خلاف ملک بھر میں ریلیاں نکالی جائیں گی، حکومت کے خلاف ہر فورم پر احتجاج کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کی کوشش ہے کہ چکمہ دے کر مشترکہ اجلاس سے قانون سازی کرے، پارلیمان میں بھی اور عدالت کے ذریعے نیب آرڈیننس کو ہر صورت روکیں گے ، عوامی قوت کے ساتھ ملک کو صحیح معنوں میں آگے لیکر جائیں۔

اس موقع پر پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ اپوزیشن شہباز شریف کی قیادت میں متحد ہے، مشترکہ اجلاس میں پیپلزپارٹی مکمل تعاون کرے گی، ہمارے تمام اراکین مشترکہ اجلاس میں شریک ہوں گے، بے روزگاری اور مہنگائی عوام کا سب سے بڑا مسئلہ ہے، میں آپ کا شکر گزار ہوں آپ وقتاً فوقتاً مشاورت کرتے رہتے ہیں۔

0 Reviews

Write a Review

Read Previous

نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسفزئی رشتہ ازدواج میں منسلک

Read Next

سوکی کناری ڈیم کیس: پشاور ہائیکورٹ کا دریا کے علاوہ موزوں جگہ تلاش کرنے کا حکم

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے